15

مرد_کیا_ہے

مرد_کیا_ہے

میں نے اسی دنیا میں مرد کو ایک بیٹے کی صورت میں دیکھا ہے جو بیمار ماں کی پائنتی سے لگ کے بیٹھا رو رو کے دعائیں مانگتا ہے اے اللہ میری مان کو میری عمر لگا دے.

میں نے مرد کو اس بیٹے کی صورت میں بھی دیکھا ہے جسکا باپ بیماری کی لاسٹ سٹیج پہ تھا اور ڈاکٹر کہتے تھے بیٹا “بس دعا” اور وہ ہاتھ جوڑے پاوں پڑتے کہتا تھا میرے باپ کو بچا لو سر جی.

میں نے مرد کو ایک بھائی کے روپ میں بھی دیکھا ہے جو میکے سے رخصت ہوتی بہن کے سر پہ شفقت بھرا ہاتھ رکھتا ہے تو روح میں سکون اترتا ہے.

میں نے مرد کا ایک یہ روپ بھی دیکھا ہے جو سردی کی ٹھٹھرتی راتوں میں جب سارے لحاف میں دبکے سو رہے ہوں تو بیٹی کی ایک فرمائش پہ”بابا اٹھیں نا کچھ کھانے کو لا کے دیں” بنا ماتھے پہ بل ڈالے شفقت بھری مسکان اچھال کے سر پہ چت لگائے کہتا ہے اٹھ گیا پتر جی.

مرد اچھا باپ بھائی بیٹا اور شوہر ھوتا ھے. بے وفا مرد یا عورت نہیں۔۔۔ بےوفائی ایک خامی ہے. جو عورت میں بھی پائی جا سکتی ہے مردوں میں بھی.
خدارا وہ مرد جن سے آپ پارکوں ہوٹلوں یا سڑکوں پہ ملتی ہیں اور پھر ایک نامحرم کی محبت کہ بدلے پوری مرد ذات کو دھوکے باز سمجھ بیٹھتی ہیں
ایسا کرنا بند کر دیں اپنے باپ بھائی اور شوہر کی طرف دیکھیں یہ بھی مرد ہیں مگر شفیق شفقت سے بھرئے

اور آخر میں ایک بات نامحرم کی بےوفائی اللہ کی طرف سے سزا ہوتی ہے …. ناجائز محبت کی سزا !
کسی سے وفا کرکے تو دیکھئیے نا…. دھوکہ نہ کھائیے اپنی زندگی خود جئیں … !
خوش رھیں اور سب کی خوشی کا باعث بنیں…!

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں