New Aeolus Mission Will Use a Laser to Monitor Earth's Winds (Video) 10

اگلے ہفتے کا موسم کیسا رہے گا

اگلے ہفتے کا موسم کیسا رہے گا

پچھلے چند سالوں میں موسم کی پیش گوئی کرنے کے ٹیکنالوجی میں بہت بہتری آئی ہے- اگلے چوبیس گھنٹے کے موسم کے بارے میں پیش گوئیاں پہلے کی نسبت زیادہ قابلِ اعتماد ہو گئی ہیں اگرچہ یہ سو فیصد درست اب بھی ثابت نہیں ہوتیں- لیکن اگلے ایک ہفتے کے موسم کی پیش گوئی پر اب بھی سائنس دانوں کا اعتماد بہت کم ہوتا ہے- اعتماد کے اس کم ہونے کی ایک بڑی وجہ یہ ہے کہ ہم بڑے پیمانے پر ہوا کی حرکات کے بارے میں بہت کم علم رکھتے ہیں- اگرچہ اس وقت بہت سے ایسے سیٹلائٹس ہیں جو چوبیس گھنٹے موسمی حالات کے بارے میں مشاہدات کرتے ہیں لیکن ان سیٹلائٹس میں عموماً کیمرے نصب ہوتے ہیں جو بادلوں کی حرکات کا مشاہدہ کر کے ہواؤں کے رخ کا اندازہ لگاتے ہیں جو محض اندازہ ہوتا ہے- جہاں کوئی بادل موجود نہ ہوں وہاں سیٹلائیٹس ہوا کے رخ اور رفتار کا اندازہ نہیں لگا پاتے جس وجہ سے موسم کی پیش گوئی کے لیے درست ڈیٹا اکٹھا نہیں کیا جا سکتا

لیکن اب ایک ایسی سیٹلائٹ خلا میں بھیجی جا رہی ہے جو دنیا بھر میں ہواؤں کی رفتار اور ان کے رخ کی بہت زیادہ ایکوریسی کے ساتھ پیمائش کر پائے گی- اس سیٹلائٹ میں لیزرز کی مدد سے زمین کی سطح سے لے کر تیس کلومیٹر اونچائی تک ہوا کے حرکات کی پیمائش کی جائے گی- اس سیٹلائٹ کو اس ماہ کے آخر یا اگلے ماہ کے شروع میں لانچ کیا جائے گا- اس سیٹلائٹ کے مہیا کردہ ڈیٹا سے اگلے ہفتے کی موسم کی پیش گوئی کرنا قدرے آسان ہو جائے گا اور ہم ان پیش گوئیوں کو زیادہ اعتماد سے اپنے اگلے چند دنوں کی پلاننگ کے لیے استعمال کر سکیں گے-

https://www.space.com/41218-aeolus-esa-mission-video.html

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں