انہوں نےکوانٹم کمپیوٹنگ میں اجزا کو سکیڑ کرایک بڑا مسئلہ حل کر دیا 18

انہوں نےکوانٹم کمپیوٹنگ میں اجزا کو سکیڑ کرایک بڑا مسئلہ حل کر دیا

نام : ارچنا کمال
عمر: 34سال
ادارہ: یونیورسٹی آف میسا چوسٹس،لول

انہوں نےکوانٹم کمپیوٹنگ میں اجزا کو سکیڑ کرایک بڑا مسئلہ حل کر دیا

جیسا کہ کوانٹم کمپیوٹنگ لیب سے فیکٹری میں منتقل ہونا شروع ہو گئی ہے، گوگل سے لیکرانٹیل تک کمپنیاں ایک مشکل مسئلہ حل کرنے کی کوشش کررہی ہیں: کس طرح باضابطہ طور پر روایتی کمپیوٹرز کو کوانٹم کمپیوٹنگ پر لایا جائے۔ ایسا کرنا اس لیے ضروری ہے کہ شاید ایسا کرنے سےکوانٹم سسٹمز پر کرپٹو گرافی اور دوسرے شعبوں میں گہرے اثرات کی توقع ہو گی اور ریگولر کمپیوٹرزان حسابات کو پڑھ سکیں گے۔

یونیورسٹی آف میسا چوسٹس کی ایک اسسٹنٹ پروفیسر ارچنا کمال نے یہ مسئلہ حل کر دیا۔ کمال نے مظاہرہ کیا کہ کوانٹم معلومات کو سٹیر کیا جا سکتا ہے اور اس کو آلہ چھوڑنے سے قبل ٹرانسمیشن کے لئے تیار کیا جا سکتا ہے جہاں اسے پروسیس کیا گیا تھا۔ اس سے پہلے ٹرانسمیشن کو ایک سنگل چپ میں فٹ ہونے کے لئے بڑے میگنٹ اور پیچیدہ آلات کی ضرورت ہوتی تھی جس سے ڈیٹا کا نقصان ہوتا تھا۔

کمال نے ٹرانسمیشن کا راستہ تھوڑا سا تبدیل کیا تاکہ معلومات کو لے جانے والے لائٹ سگنل اجزا کا سائز ایک کوارٹر سے چند مائیکرو میٹر ہو جائے۔ وہ کہتی ہیں، “یہ بہت بڑا فرق ہے۔” “ہماری سکیمز نے کوانٹم سگنلز کے ڈھیر کو ایک چپ پر لانے کے قابل بنا دیا”۔

تحریر: رس جسکالین

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں